عنوان (نظم ضروری تو نہیں)

کرنی بھی تو،چند باتیں ہیں تھیں۔۔۔!!
میرا درست لہجہ ہو، یے ضروری تو نہیں۔۔۔!!

نشے میں تھے ہم، تیری آنکھیں دیکھ کر۔۔۔!!
ہر نشہ جام سے ہو، یے ضروری تو نہیں۔۔۔!!

بہکے ہوئے لوگ، اکثر شاعری پے اتر آتے ہیں۔۔۔!!
ہر شاعری ہو نظم، یے ضروری تو نہیں۔۔۔!!

دیکھ رہے ہو ایسے جیسے شکایت کروگے خداسے۔۔۔!!
بھلا ہر بات خدا کو بتانا، یے ضروری تو نہیں۔۔۔!!

میں جانتا ہوں فرشتے، خدا کو بتلائیںگے میری کہانی۔۔۔!!
بھلا ہر بات میں ذکر تیرا ہو، یے ضروری تو نہیں۔۔۔!!

اب جو بچھڑے تو جنت میں ملینگے اسامہ۔۔۔!!
ہر محبت کا انجام جہنم ہو، یے ضروری تو نہیں۔۔۔!!
اسامہ سومرو✍

Published by Usama Soomro

Social activist|Progressive|Writer|Blogger|Humanist|Cultural Critic| and Researcher.

Leave a comment

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

Create your website at WordPress.com
Get started
%d bloggers like this: